Breaking News

وہ ایک آنسو -نظم-سلیمان خُمار

میرے شعری مجموعے ” تیسرا سفر” سے ایک نظم فیس بُک کے باذوق احباب کی معتبر بصارتوں کی نذر ؛

وہ ایک آنسو

وہ ایک آنسو
لرز رہا ہے جو تیری پلکوں کے آئینے میں
وہ ایک آنسو
جو کہ رہا ہے ترے مرے درد کا فسانہ
وہ ایک آنسو
جو تیری اور میری قربتوں کے بدن سے ٹپکا ہوا لہو ہے
وہ ایک آنسو
کہ جس کے آگے نظر جھکائے ہوےء کھڑی ہیں
بلندیاں سات آسماں کی
وہ ایک آنسو
عظیم تر ہے جو دو جہاں سے
اُس ایک آنسو کو
اپنی پلکوں کے آئینے سے گرا نہ دینا –

(سلیمان خُمار)

About aseem khazi khazi

Check Also

وار فکشن شام اک داستان ِعشق -افسانہ- Qaisar Nazeer Khawar

تین خواتین کا مشترکہ طور پر لکھا افسانہ برائے تنقید و تبصرہ ( یہ مئی …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *