Breaking News

Ghazal By Ahmed Soz

یک تازہ غزل روایتی مزاج کی

آنسوؤں سے کبھی وضو بھی کروں
اپنے گالوں کو سرخ رو بھی کروں

چاک کرنے لگوں کبھی دامن
اور کبھی بیٹھ کر رفو بھی کروں

نشئہ ھو کرے مجھے مدہوش
اپنی راتیں کبھی سبو بھی کروں

زندگی تجھ سے پیار بھی ھے مجھے
زندگی میں تجھے لہو بھی کروں

ایک دن فاصلے مٹاؤں سبھی
میں اسے اپنے روبرو بھی کروں

مجھ میں ھے اتنی جرائت اظہار
بیٹھ کر اس سے گفتگو بھی کروں

رنگ غزلوں میں آگہی کا بھروں
اور کچھ ان میں رنگ و بو بھی کروں

About iliyas

Check Also

Shamoil Ahmed Short Story

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *