Breaking News

Contents

وار فکشن شام اک داستان ِعشق -افسانہ- Qaisar Nazeer Khawar

تین خواتین کا مشترکہ طور پر لکھا افسانہ برائے تنقید و تبصرہ ( یہ مئی 2018 ء میں امریکہ کے ایک موقر اخبار میں شائع ہوا تھا ۔ ) > (اسماء اجرودی ، لویزا لوولک ، سوزن ہیڈاموس ) اردو قالب ؛ قیصر نذیر خاورؔ بیروت ۔ ۔ ۔ دوپہر بارہ بجے موبائل کی گھنٹی بجی ۔ ماروا جانتی تھی …

Read More »

Short Story by Haneef Qamar

اگنی بھتّہ نوکر:(اپنےدوست سے) یار اپنا سیٹھ بڑا جھوٹا ہے، پچھلے پانچ سال سے تنخواہ بڑھانے کے بڑے بڑےوعدے، ایک رینک ایک بونس، سب کااپنا گھر، مفت دوائیں، مفت یونیفارم، بچوں کی اسکول فیس بھتّہ اور نہ جانے کیا کیا بڑے بڑے وعدے کرتارہا ہے، لیکن ..ایک بھی پورا نہیں کیا..جب سے نوکری جوائن کیا ہوں پچھلے پانچ سال سے …

Read More »

Ghazal by Arshad Shaheen

گل سمن زار سے نکلتے ہوئے لوگ بازار سے نکلتے ہوئے حسن کو دیکھتا رہا مڑ کر عشق دربار سے نکلتے ہوئے کتنے کردار آ بسے مجھ میں ایک کردار سے نکلتے ہوئے اپنی وحشت بھی ساتھ لے آیا آدمی غار سے نکلتے ہوئے کس قدر کرب سے گزرتا ہے سایہ دیوار سے نکلتے ہوئے دل تو سب گھونسلوں میں …

Read More »

Sukoot Ghazal By Naheed

الہام کو تم نے زبان کیا دی آنکھوں نے دھڑکنا ہی چھوڑ دیا “تمہارے بغیر تو میرا دل ڈوب رہا ہے” صرف تمہارا دل نہیں ڈوبا تھا، ماں مجھ سے رُو بہ رُو کی ہوئی تمہاری اس آخری بات نے میری بھی جان نکال لی تھی جتنا جینا قسمت میں طے تھا وہ تمہارے جانے تک ہی تھا اب تو …

Read More »

Short Story By Mohmmed Jameel Akhter گونگا وائلن نواز

اُس شخص سے اُس کی زبان چھین لی گئی تھی سووہ بول نہیں سکتا تھا، اُس نے ایک وائلن خریدا اور شہر کی گلی گلی میں بجاتا پھرتا،ایسا اُس نے روزی روٹی کمانے اور اپنا دل بہلانے کی خاطر کیاتھا تاکہ وہ اپنا ماضی بھول جائے لیکن اُس کے وائلن سے ہمیشہ دُکھی ساز نکلتے تھے۔ جب وہ گلیوں میں …

Read More »

Ghalib Ke Misre Pr Meri Ghazal By Dr. Meena Naqvi

ہم فسانہ عشق کا دوہرائیں کیا بحر غم میں ڈوب کر مر جائیں کیا پھر یذیدی مملکت بڑھنے لگی تیر پھر معصوم بچے کھائیں کیا؟ ہم زبانِ میثمِ تمار ہیں لفظ کو اظہار تک لے آئیں کیا؟ روبرو رہتا ہے ہر دم آئنہ جھوٹی تعریفوں پہ ہم اترائیں کیا؟ کہہ دیا اک بار تم سے عشق ہے حرفِ آخر ہے …

Read More »

وہ ایک آنسو -نظم-سلیمان خُمار

میرے شعری مجموعے ” تیسرا سفر” سے ایک نظم فیس بُک کے باذوق احباب کی معتبر بصارتوں کی نذر ؛ وہ ایک آنسو وہ ایک آنسو لرز رہا ہے جو تیری پلکوں کے آئینے میں وہ ایک آنسو جو کہ رہا ہے ترے مرے درد کا فسانہ وہ ایک آنسو جو تیری اور میری قربتوں کے بدن سے ٹپکا ہوا …

Read More »