Breaking News

Ghazal By Asanghani mushtaque

غزل۔۔۔۔۔۔۔
اسانغنی مشتاق رفیقیؔ
اپنے روئے تاباں کو بے نقاب لے آنا
جس میں دل کی باتیں ہوں، وہ کتاب لے آنا

اپنا سوختہ دل میں نذر کرنے لاؤں گا
اپنے مد بھرے لب کی تم شراب لے آنا

صرف ہم رہیں جس میں ، دوسرا نہ ہو کوئی
جاگ کر جسے دیکھیں، ایسے خواب لے آنا

جس کو دیکھتے ہی بس یاد آپ کی آئے
جا کے باغ سے ایسا اک گلاب لے آنا

تیری دید کی خاطر ، بے قرار ہوں کب سے
ہجر کا اندھیرا ہے، ماہتاب لے آنا

مجھ سے آکے ملنے کا جس میں ٹھوس وعدہ ہو
اب کی بار اے قاصد وہ جواب لے آنا

جھوم جائیں سب سُن کر ، بزمِ شعر خوانی میں
اب کے تم رفیقی کا انتخاب لے انا

About iliyas

Online Drugstore, buy baclofen online, Free shipping, buy Lexapro online, Discount 10% in Cheap Pharmacy Online Without a Prescription

Check Also

Hikayat By Q N Khawar

صوفی سنتوں کی حکایتوں سے انتخاب ۔ 59 فرضی چور اردو قالب؛ قیصر نذیر خاور …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *